شہ سرخیاں
Home / انٹرویوز / امیر مر کزی جمعیت اہلحدیث ضلع چترال جنا ب عمر قریشی صاحب کا پہلا باضابطہ انٹرویو!

امیر مر کزی جمعیت اہلحدیث ضلع چترال جنا ب عمر قریشی صاحب کا پہلا باضابطہ انٹرویو!

چترال (نمائندہ چترال آفیئرز ) جمعیت اہلحدیث ضلع چترال کے امیر مرکزی جناب عمر قریشی صاحب کے ساتھ سوال وجواب کے ایک خصوصی نشت میں جناب عمر قریشی صاحب نے دعوت و تبلیغ ،عوامی فلاح و بہبود ،تعلیم و تربیت ،ضلع چترال اور پاکستان کے حوالے سے مختلف سوالوں کا جواب دیتے ہوئے اپنے تاثرات و خیالات سے ہمیں نوازا۔ عمر قریشی صاحب نے 1993ء میں جامعہ سے فارغٖ ہونے کے بعد چترال میں دعوت و نثر و اشاعت کے لئے ایک کمرہ پر مشتمل آفس سے اپنے کام کا آغا ز کیا ۔ نوجوان تعلیم یافتہ اور پڑھے لکھے افراد سے رابطہ کیا جن کی تعداد شروع میں کم تھی ۔ آہستہ آہستہ ایک چھوٹے سے لائبیری کی بنیاد رکھی ۔ قئرشی صاحب کا کہنا تھا کہ قرآن و سنت کے شیدائی ہماری دعوت پر ہمارے ساتھ جمع ہوتے گئے ہم نے سرفہرست خدمت خلق کو اپنا بنیاد بنایا کیونکہ خدمت خلق کے بغیر قرآن و سنت کی دعوت کا کام قدرے مشکل ہے۔ ضلع چترال میں اتحاد و اتفاق کو فروغ دینے کے لیے مختلف مکتبہء فکر کے علماء سے استفادہ کیاجن میں مکتبہء دیوبند کے علماء کے علاوہ دوسرے علماء نے ہمارابھر پور ساتھ دیاجس کی بدولت مختلف تحصیلوں میں لائبیری بھی بنائے گئے۔ ۔
فلاحی اور رفاعی کاموں کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں قریشی صاحب کا کہنا تھا کہ مختلف حوالے سے خصوصاً رمضان المبارک کے مہینے میں مستحقین غریب اورنادار افراد میں راشن اور رمضان پیکچ کی تقسیم اور اس کے علاوہ ضلع چترال کے اند ر مختلف مساجد میں رمضان کے مہینے میں روزہ داروں کے لیے افطاری کا پروگرام وغیرہ بھی شامل ہیں ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ضلع چترال میں مساجد کی تعمیر اور نئے مساجد کی سنگ بنیاد کا عمل بھی جاری ہے ۔ موجودہ حا لات میں ضلع چترال کے لیے بہت کچھ کرنے کا عزم و ارادہ ہے ۔
اس حوالے سے وسائل و ذرائع کے حوالے سے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ وسائل کی قلت کے باوجود ہم نے حتی الامکان کوشش کی اور عوامی خد مت کے لیے ہر موقع و محل میں پیش پیش رہے۔ اسی حوالے سے ملک کے اندر مسلم این۔جی ۔اوز خصوصا سعودی این۔جی۔اوز جاکر وہاں ضلع چترل کی پسماندگی اور علاقے کے افراد کا امن پسندی کاتفصیلی حال بتایا۔ اور چترال کے لیے ترقیاتی کاموں کے لیے باضابطہ درخواست بھی جمع کرائی ۔ جس کا حاصل ارندو روڈ اور گولین گول 108 میگا واٹ بجلی گھر کی صورت میں ہمارے انکھوں کے سامنے ہیں۔۔۔
اس کے علاوہ تعلیمی شعبے سے متعلق سوال پر امیرمرکزی جمعیت اہلحد یث ضلع چترال کا کہنا تھا کہ چترال سے قابل اور تعلیم یا فتہ طالب علموں کو میرٹ کی بنیا د پر سعودی عرب کے سب سے بڑ ے یو نیورسٹی جامعہ امام محمد بن سعود یونیورسٹی ریاض میں اسکالر شپ دلائی جوکہ وہاں زیر تعلیم ہیں ۔ ان کا مزیدکہنا تھا گزشتہ ایک سال سے سو یتیم بچوں کی کفالت کر رہا ہوں جو کہ چترال سے باہر زیر تعلیم ہیں ۔۔۔
ضلع چترال میں آپاشی اور پانی کے صاف پانی کے حوالے سے اظہار خیال کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ چترال ٹاؤن میں خاص خاص مقامات پر ٹیوب ویلز کا افتتاح بھی ہو چکا ہے اور مزید ٹیوب ویلز بھی ہمارے پروگرام میں ہیںیہ سب ہمارے لائحہ عمل کا حصہ ہیں ۔
سرزمین ضلع چترال اور چترالی عوام کے متعلق ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ چترال پڑھے لکھے لوگوں کی سر زمین ہے جس وقت ہم نے چترالی عوام کو قرآن و سنت کی دعوت دی تو علماء نے ہمارے ساتھ اتفاق کیا۔ اور انہوں نے چترال کو منی کراچی قرار دیا اور کہا کہ چترال سی پیک کی بدولت ایک بین الاقوامی اڈہ بنے جارہاہے۔۔۔
پاکستان بنانے میں جمعیت اہلحدیث کے کردار کے سوال پر قریشی صاحب کا کہنا تھاکہ چونکہ پاکستان کلمہء طیبہ کے نام پر بنا ہے پاکستان بنانے میں سب سے بڑا کردار جمعیت اہلحدیث کا ہے ۔ قائداعظم کو پاکستان کا کیس لڑنے کے لیے راضی کرنے میں جمعیت اہلحدیث کے اکابرین کا اہم کردار رہا ہے۔پاکستان سے محبت ہمارے رگ رگ میں ہے اور ہم شعو ری طور پر ترقی کے خواہاں ہیں ۔۔۔
آخر میں انہوں نے قائد جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمن کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا کہ جنہوں نے امام کعبہ کو جمعیت علماء اسلام کے صد سالہ تقریب میں شرکت کرنے کی دعوت دی ۔ اور جس کی بدولت امت اسلام میں اتحاد و اتفاق پیداہوا ۔ ان کا کہناتھا کہ انشاء اللہ وہ چترال کے لیے بہت کچھ کر نا چاہتے ہیں چھوٹی منہ بڑی با ت مگر ان کا اللہ پاک پرمکمل بروسہ ہے ۔۔۔

Facebook Comments

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے