شہ سرخیاں
Home / پاکستان / سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی حمایت میں مسلم لیگ (ن) ضلع چترال کی جانب سے عوامی جلسہ

سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی حمایت میں مسلم لیگ (ن) ضلع چترال کی جانب سے عوامی جلسہ

چترال (نمائندہ چترال آفیئرز) آج پیر کے روز پاکستان مسلم لیگ (ن) ضلع چترال کی قیادت کی جانب سے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی حمایت میں جلسے کا اہتمام کیا گیا تھا۔یاد رہے کہ پاکستان کی اعلٰی عدلیہ کی جانب سے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کو پینامہ لیکس کی بیناد پرنا اہل قرار دیتے ہوئے انہیں وزیر اعظم کے عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔جس کے رد عمل میں پاکستان بھر میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی جانب سے میاں نواز شریف کی حمایت میں جلسے اور ریلیوں کا سلسلہ جاری ہے۔اسی طرح آج چترال میں بھی میاں محمد نواز شریف کی حمایت اور حق میں ایک جلسہ منعقد ہوا

 

جس میں مسلم لیگ (ن) ضلع چترال کی قیادت کے علاوہ دوسرے پارٹی سے وابستہ افراد اور کثیر تعداد میں عوام نے شرکت کی ۔صدر مسلم لیگ (ن) ضلع چترال سعید احمد ،جنرل سیکرٹری صفت زرین ،ایڈوکیٹ محمد کوثر ،ایڈوکیٹ فضل الہی ایڈوکیٹ غلام حضرت انقلابی ،محمد مظفر پرواز بونی اورآل پاکستان مسلم لیگ کے رہنمامحمد ولی شاہ دوسرے شرکاء نے شرکت کی ۔

اس موقعے پر آل مسلم لیگ کے رہنمامحمد ولی شاہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ سب سے پہلے ہم مسلمان ہیں پھر پاکستان اور پھر چترالی ۔پاکستانی اور چترا ل کے لیے جس نے بھی خدمت کی ہے ہمارے سیاسی مخالفین نے اپنی سیاست چمکانے کے لیے ان کے خلاف کام کیا ہے۔بھٹو نے چترال کی خدمت کی مگر جب اس کو پھانسی دی گئی تو سیاسی مخالفین کی جانب سے حلوے تقسیم ہوئے۔مشرف پر جب برا وقت آیا تو انہیں سیاسی مخالفین نے اس کے خلاف ہائی کورٹ میں کیس دائر کیا۔اسی طرح جب میاں محمد نواز شریف نے پاکستان اور چترال کے لیے کام کیا تو سیاسی مخالفین نے میٹھائیاں تقسیم کئے۔آپ خود انصاف کریں کہ نواز شریف نے چترال کے لیے کچھ کیا ہے کہ نہیں۔

مسلم لیگ (ن) ضلع چترال کے صدر سعید احمد صاحب نے جلسے سے خطاب میں کہا کہ میاں محمد نواز شریف کی قیادت میں پاکستان ایشین ایکنامک ٹائیگر بننے جارہا تھا لیکن پاکستان کو ایشین ٹائیگر بننے نہیں دیا گیا ۔پاکستان کی ترقی کی راہ میں خلل ڈالا گیا اور میاں محمد نواز شریف کو نا اہل قرار دیا گیا۔میاں محمد نواز شریف نے پاکستان اور چترال میں ترقیاتی کام کیے ۔اس موقعے پر ان کا کہناتھا کہ جماعت اسلامی اور ان کی قیادت کے فیصلے سے ہمیں سخت مایوسی ہوئی ۔سراج الحق دوغلی پالیسی اختیار کرتے ہوئے ایک طرف حمایت اور دوسری جانب مخالفت کررہے ہیں۔

اور مولانا فضل الرحمٰن کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ فضل الرحمٰن نے نواز شریف کا ساتھ دیا ۔میاں محمد نواز شریف سابق وزیر اعظم پاکستان کی چترال میں ترقیاتی کاموں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مشرف نے 5 عرب روپے لواری ٹنل پہ لگائے جبکہ نواز شریف نے 22 عرب روپے لگا کر لواری ٹنل کو پائے تکمیل کو پہنچایا۔دوسری جانب تبدیلی کا دعوی کرنے والی تحریک انصاف کے چیئرمین عوامی نیشل پارٹی کی جانب سے شروع کیے گیے چترال بائی پاس روڈ کا افتتاح کرکے چترالی عوام کو بیوقوف بنا رہے ہیں۔آخر میں کہا کہ ہم وزیر اعظم پاکستان خاقاں عباسی کو بھی دعوت دینگے جو نواز شریف کی قیادت میں ضلع چترال میں جاری ترقیاتی کاموں کو جاری رکھنے کے لیے اقدامات کریں۔ہم الیکشن کی تیاریاں شروع کررہے ہیں

لہذا چترال سے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے لیے مسلم لیگ (ن) کے نمائندوں کا انتخاب کریں۔جلسے سے دوسرے مقررین نے بھی خطاب کیا جن میں مسلم لیگ (ن) کے جنرل سیکرٹری صفت زرین، محمد مظفر پرواز بونی شامل تھے۔مقررین نے چترال کے عوام سے میاں محمد نواز شریف کی حمایت میں کھڑا ہونے اورپاکستان اور چترال کی ترقی کی راہ میں حائل رکاوٹوں کی پرواہ نہ کریں مزید ان کا کہنا تھا کہ بہت جلد دوسرے ہم خیال سیاسی پارٹیوں کو لیکر میاں نواز ے حق میں ایک عظیم جلسہ کریں گے ۔

Facebook Comments

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!