شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / ہمارے معاشرے میں عورت کا کردار

ہمارے معاشرے میں عورت کا کردار

ہمارے معاشرے میں عورت کا کردار

دنیا میں کوئی بھی چیز بے کار اور بے مقصد نہیں ہے.اللہ تعالی نے جو کچھ بھی بنایا ہے سب کی اپنی ضرورت اور اہمیت ہے.اور اس تخلیقیت سے معاشرے کا کوئی نہ کوئی فائدہ ضرور جڑا ہوا ہے.اگر ان میں سے کسی ایک بھی کمی ہو تو معاشرے کا نظام درہم برہم ہوجاتاہے.اسی طرح اگر ہم انسانی معاشرے کی طرف دیکھیں تو معاشرے میں خواتین کا کردار سب سے اہم نظر آتاہے.

اگر ہم اسلام کے نظرئیے سے دیکھیں تو اسلام نے عورت کو سب سے اہم اور اعلی مقام عطا کیا ہے.ماں کے روپ میں ہو تو جنت اد کے قدموں تلے ہے.بیٹی کو رحمت اور گھر کی عزت قرار دی گئی ہے.بیوی کی صورت میں گھر کا محافظ قرار دیا گیا ہے.اگر بہن ہو تو گھر کی زینت کہلاتی ہے.ازروئے اسلام جتنا حق مردوں کا ہے اور اتنا ہی حق عورتوں کا مقرر کیا گیا ہے.بلکہ مردوں سے کہیں بڑھ کر ان کے حقوق متعین کئے گئے ہیں.ان کی ضرورت سے لیکر ان عزت و ناموس کا خیال رکھنا مرد ہر فرض ہے

ان تمام صفتوں سے متصف ایک خاتون اگر تعلیم یافتہ ہو تو سونے پر سہاگہ کا کام دیتی ہے.نپولین نے کہا تھا”تم مجھے ایک تعلیم یافتہ ماں دو.میں تمھیں ایک بہتر قوم دوں گا”گھر میں اگر ماں تعلیم یافتہ ہو تو وہ گھر تہذیب اور شائستگی کا گہوارہ کہلاتاہے.یہ اثرات پورے معاشرے پر مرتب ہوتے ہیں.حقیقیت تو یہ ہے کہ تعلیم کے میدان میں خواتین مردوں کو کافی پیچھے چھوڑ چکی ہیں.وہ زندگی کے ہر شعبوں میں مردوں کے شانہ بشانہ کام کرکے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوانے میں کامیاب رہی ہیں.چاھےوہ ڈاکٹری کا میدان ہو.چاھے وہ انجنئرنگ جیسی مشقت طلب کام.چاھے علم کے میدان میں تدریسی خدمات بجا لانی ہو..خواتین نے اپنی انفرادیت ثابت کرچکی ہیں..ارفعہ کریم اور ملالہ یوسفزئی جیسی بیٹیاں پوری دنیا میں ملک کا نام روشن کرچکی ہیں.یہ صرف آج کا نہیں ابتدائے اسلام سے ہی خواتین کا یہ کردار رہاہے.تاریخ میں کبھی یہ کردار ہمیں حضرت خدیجہ رض اور حضرت عائشہ صدیقہ رض کی صورت میں نظر آتی ہیں..اسلام کی راہ میں جتنی قربانی مردوں نے پیش کی ہے اس میں عورتوں نے بھی بڑھ چڑھ کر اپنا حصہ ڈالا ہے.

  • یہ سب باتیں مسلمہ حقیقیت ہیں مگر ان تمام تر کے باوجود ہمارے معاشرے میں آج بھی کچھ لوگ ایسے موجود ہیں جو عورت کو تعلیم کے حق سے محروم رکھنے کو ثواب سمجھتے ہیں.وہ اس سے انکاری ہیں کہ خواتین تعلیم حاصل کرکے معاشرے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرلے.خواتین کو زیوار تعلیم سے محروم رکھنے کا نتیجہ ہے کہ معاشرہ جہالت کی گھٹا ٹوپ اندھیروں میں ڈھلتا جارہاہے..خواتین خودکشی کی طرف مائل ہیں اور آئے روز وہ ڈپریشن کا شکار ہوتی جارہی ہیں..ضرورت اس امر کی ہے کہ خواتین کی حوصلہ آفزائی کی جائے.ان کی فطری صلاحیتوں کی نشونما میں ان کا ساتھ دیا جائے.اور یہ عورت پر بھی فرض ہے کہ جہاں ان کو ایسے مواقع ملیں وہاں وہ اپنی عزت و ناموس کی حفاظت کرتے ہوئے اپنا کردار نبھائے.معاشرتی ترقی.سماجی تبدیلی میں اپنا مثبت کردار پیش کرے..اسی میں کسی قوم کی بقا کا راز مضمر ہے.
Facebook Comments