شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / ڈی۔سی آفس میں نوکریوں کے حالیہ امتحانات میں نے بےضابظگیوں کا انکشاف

ڈی۔سی آفس میں نوکریوں کے حالیہ امتحانات میں نے بےضابظگیوں کا انکشاف

چترال (نمائندہ چترال آفیئرز) ڈپٹی کمشنر آفس چترال میں آسامیوں کو پر کرنے کے لیے ایک پرائیوٹ ریکروٹنگ کمپنی ، پاکستان ٹسٹنگ سروسز کے خدمات حاصل کئے گئے۔ اور گذشتہ اتوار کو اس سلسلے میں ٹسٹ چترال میں منعقد ہوئے۔ گوکہ ٹسٹ کو کافی مشکل قرار دیا گیا اور کئی ایک امیدواروں نے اس کو بہت ہی مشکل گردانا۔ لوگوں نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ میرٹ کی پاسداری تبھی ممکن ہوگی جب اسی طرح کے ٹسٹ پاس کرکے لوگ آگے آئیں گے۔

لیکن کچھ ہی دیر بعد یہ تمام باتیں ہوا ہوگئیں۔ جب کچھ امیدواروں نے میڈیا گفتگو کرکے یہ راز افشاء کردئیے کہ مذکورہ ٹسٹ میں کئی ایک امیدواروں نے موبائیل فون کو کھلم کھلا استعمال کیا۔ اور ساتھ میں انہوں کچھ اور اعتراضات بھی کئے جو کہ یہاں پر درج ہیں۔

  • امیدواروں کو ایک سے زیادہ جوابی پرچے دئیے گئے۔ حالانکہ اس طرح کے ٹسٹ میں ایسا نہیں ہوتا ہے
  • امتحانی ہال میں موبائل کا استعمال کیا جاتا رہا۔ یہ بھی اس طرح کے ٹسٹ میں نہیں ہوتا جبکہ موبائل اگر کسی سے برآمد ہوتا ہے تو اس کا پرچہ کینسل کردیا جاتا ہے
  • جوابی پرچہ چاہے وہ حل کیا گیا ہو یا نہیں کسی صورت میں امتحانی ہال سے باہر نہیں جاتا جبکہ اس ٹسٹ میں کئی ایک جوابی پرچے آوّٹ ہوئے اور ان میں سے ایک کاپی زیل نیوز کو بھی موصول ہوئی ہے۔
  • کچھ امیدواروں نے جوابی پرچی ہال سے باہر لاکر حل کرکے پھر ممتحن کو جمع کرادی جو کہ کسی بھی طرح کے امتحانات میں نہیں ہوتا۔

اس کے علاوہ ان امیدواروں نے یہ بھی شکایت کی امتحانی عملہ مخصوص افراد کی پشت پناہی اور سپورٹ کرتے رہے۔ اور پیشہ ورانہ صلاحیتوں کی فقدان کی وجہ سے اس طرح کے مسائل پیدا ہوئے۔

انھوں نے ڈپٹی کمشنر چترال سے اپیل کی کہ وہ ان امتحانات کو کالعدم قرار دے اور کسی اور ادارے یہ ٹسٹ دوبارہ کروائے تاکہ قابل اور حقدار کو ان کا حق ملے اور شفافیت کا عمل بخوبی انجام پائے۔

میڈیا کو موصول پی ٹی ایس کا آوّٹ شدہ پرچہ

 
Facebook Comments
error: Content is protected !!