شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / زیوار گول کے گرم چشمے میں …. شفا پوشیدہ کیوں؟

زیوار گول کے گرم چشمے میں …. شفا پوشیدہ کیوں؟

تحریر: وقاص احمد ایڈوکیٹ
تورکھو کا خوبصورت گاوں واشچ اور زنگ لشٹ کے درمیان ایک شوتار(دریا کنارہ) ہے کہنے کو تو یہ ایک شوتار(دریا کنارہ) ہے لیکن اس میں لوگوں کے قدیم الیام کے پھلدار اورغیر پھلدار درختان ,زمینات , رہاشی مکانات اور شکار کے لیے تالاب موجود ہیں اس کو زیوار شوتار کہا جاتا ہے یہ زنگ لشٹ اور واشچ کے سنگھم واقع ہے اس کے شمال مغرب کی طرف واشج اور زنگ لشٹ سے تقریباً6 کلومیٹر کے فاصلے پر ایک چٹان کے نیچے سے گرم پانی نکلتی ہے اس کو زیوار کا چشمہ یعنی زیوارواوچ کہا جاتاہے اس چٹان کے درمیان اتنی پانی نکلتی ہے جو 6 انچ قطر والی پائپ میں آسکتی ہے اور پانی اتنی گرم ہے کہ اگر اس کے اندر انڈا رکھا جائے تو صرف دو یا زیادہ سے زیادہ تین منٹ میں مکمل طور پر پک سکتی ہے اسی چشمے تک پہنچنے کے لیے پیدل دو گھنٹے کی مسافت طے کرنا ہو تا ہے عالباً سال 1989 کو دو روسی ہیلی کاپٹر اس چشمے کے قریب اترے تھے اور پاکستانی افواج نے تمام کروممبرز کو گرفتار کر کے لے گئے تھے اور ہیلی کاپٹروں کو بھی اپنے تحویل میں لیے تھے
تورکھو کے مختلف علاقوں کے لوگ مئی کے مہینے میں بہت زیادہ تعداد اسی مقام پر آکر دو تین دن تک علاج کی عرض ٹیہرتے ہیں جن میں خواتین کی تعداد زیادہ ہو تی ہے لوگ اس چشمے کا پانی معدے اور انتوں کی بیماری کے لیے پیتے ہیں اور اکثر صحت یاب بھی ہوتےجاتے ہیں یہ گرم چشمہ کا پانی اتنا گرم ہوتا ہے کہ لوگ چٹان کے اندر زیادہ سے زیادہ پانج منٹ تک گزار سکتے ہیں یہ چشمہ ہائی بلڈ پریشر,جلد کی بیماریوں, جوڑوں کےدرد,سردرد, کولسٹرول,جسم کے کسی بھی حصے پر داغ دھبہ,اور دانوں کے علاج کے لیے بہت مشہور ہے اکثر لبے اولاد لوگ بھی چشمے کے پانی سے اپنے علاج کے خاطر تشریف لاتے ہیں یہ چشمہ مقام گرم چشمہ میں موجود چشمے کے مقابلے میں کافی گرم ہے اور پانی سے گندک کی بو بھی آتی ہے لیکن اس مقام تک پہنچنے کے لیے دو گھنٹے پیدل چلنا پڑتا ہےجو کہ یہ بعض لوگوں کے لیے تکلیف دہ ہوگا
Facebook Comments
error: Content is protected !!