شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / چترال شہر میں کھلے دودھ کا کاروبار ؟

چترال شہر میں کھلے دودھ کا کاروبار ؟

دودھ اللہ تعالی کی نعمتوں میں سے ایک اہم نعمت ہے۔

اللہ تعالی قرآن مجید میں فرماتے ہیں۔ترجمہ: اور حقیقت یہ ہے کہ تمھارے لیے مویشیوں میں بھی ایک سبق ہے ۔ان کے پیٹوں میں جو کچھ ہے اسی میں ایک چیز (یعنی دودھ) ہم تمہیں پلاتے ہیں۔اور تمھارے لیے ان میں بہت سے فائدہ بھی ہیں۔ان میں سے بعض کو تم کھاتے ہو۔یہاں اللہ تعالی خود یہ ارشاد فرمارہے ہیں کہ اس میں یعنی دودھ میں تمھارے لیے فائدے ہیں اور دودھ سے بنی دوسری چیزوں میں جس میں دہی ،لسی، گھی، مکھن اور دوسرے بہت ساری چیزیں آتی ہیں۔اگر دودھ یا دودھ سے بنی چیزیں بغیر ملاوٹ کے ملیں تو کیا کہنے لیکن بدقسمتی سے آج کے اس دور میں ان چیزوں کا خالص ملنا ناممکن تو نہیں لیکن مشکل ضرور ہے ۔چترال میں عرصہ قدیم سے لوگ دودھ کی کمی کو مال مویشی پال کر پور ا کرتے آئے ہیں۔وقت کے ساتھ مال مویشی پالنے میں مشکلات کی وجہ سے لوگ ڈبہ پیک دودھ استعمال کرنے لگے ۔اور شہر کے مختلف ہوٹلوں میں بھی ملک کے مشہور برانڈڈ دودھ استعمال کرنے لگے ۔لیکن بدقسمتی سے ان مشہور برانڈڈ ڈھیری پراڈکٹس میں بھی ملاوٹ کے آثار پایا جاتے ہیں۔جو کہ سوشل میڈیا میں گردش کے بعد حکومتی اداروں کی توجہ کا مرکز بنے ۔پھر تب جاکے کہی ان چیزوں کی جانج پرتال کا عمل شروع ہوا ۔اور کسی حد تک اس پر قابو پالیا گیا۔
گزشتہ ایک دو مہنے سے چترال شہر میں کھلے دودھ اور دودھ سے جڑی دوسری اشیاء کھلے عام فروخت کی جارہی ہیں۔جوکہ اچھی بات ہے لیکن اگر خالص ہو ں تب ؟ یہاں غور طلب بات یہ ہے کہ یہ دودھ کافی بڑی مقدار میں پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے مختلف اضلاع سے چترال لائی جارہی ہے ۔یہاں ایک اور بات آپ کو بتاتے چلیں کہ اس دودھ کو چترال پہنچتے پہنچتے کم از کم ایک یا دو دن لگ جاتے ہیں۔یہ بات سمجھ سے بالاتر ہے کہ دیڑھ دن تک دودھ بغیر خراب ہوئے چترال کیسے پہنچ جاتی ہے؟دودھ کی خاصیت ہی یہی ہے کہ اگر تھوڑی سی گرمی اور ہلائی جائے تو دودھ خراب ہوجاتی ہے۔جبکہ تیمرگرہ سے چترال کا کافی فاصلہ ہے اور روڈ کی حالت بھی خراب ہونے کے باوجود یہ دودھ وہاں سے صحیح سلامت چترال پہنچ جاتی ہے۔اب یہاں سوال یہ اٹھتا ہے کہ آخر کس طرح ا س دودھ کو صحیح سلامت چترال پہنچاتے ہیں ؟ کہیں ایسا تو نہیں دودھ میں فارمولین (ٖ(Formulin استعمال کی جارہی ہویا کوئی اور مضر صحت کیمکیل دودھ میں ملائی جارہی ہو؟فارمولین ایک ایسی کمیائی مرکب ہے ۔جو مردوں کو دیر پا تازہ رکھنے کے لیے استعمال کی جاتی ہے اور یہی چیز ملک کے دیگر حصوں میں دودھ میں استعمال کی جاتی ہے تاکہ وہ دیر پا تازہ و صحیح سلامت رہے ۔
ہمارا مطالبہ چترال انتظامیہ سے یہ ہے کہ چترال میں جہاں کہی بھی کھلا دودھ فروخت کی جارہی ہو۔وہاں باقاعدہ طور پر ہر نئے کنٹینئر کو جو کہ دودھ چترال پہنچاتی ہے اس کی سمپلنگ (Sampling)کی جائے۔اور اس دودھ کے معیار کو جانچا جائے۔اگر دودھ صحیح نکل آئے تو ٹھیک ورنہ کھلے دودھ فروشوں پر پابندی لگائی جائے کیونکہ جعلی دودھ انسانی صحت کے لیے مضر ہے خاص کرجعلی کھلادودھ جگر،گردوں اور دوسرے مہلک بیماریاں جنم لے سکتی ہیں۔

Facebook Comments