شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / چترال کو دو انتظامی ضلعوں میں تقسیم کرنے کے بعد یہ چترال کا حق بنتا ہے کہ اس کیلئے دو صوبائی نشستیں مختص کی جائیں۔ مولانا عبد الاکبر چترالی

چترال کو دو انتظامی ضلعوں میں تقسیم کرنے کے بعد یہ چترال کا حق بنتا ہے کہ اس کیلئے دو صوبائی نشستیں مختص کی جائیں۔ مولانا عبد الاکبر چترالی

پشاور( نمائندہ چترال)چترال کی دو صوبائی سیٹوں کی بحالی کیلئے قومی اسمبلی میں دستور پاکستان میں ترمیمی بل2018 ؁ء مولانا عبد الاکبر چترالی کی طرف سے قومی اسمبلی سیکر یٹر یٹ میں جمع کرا دی گئی ہے دستور میں ترمیمی بل میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ چترال ایک دشوار گزار اور پسماندہ علاقہ اوربے روزگاری عام ہے چترال 14850 مربع کلو میٹر پر محیط ضلع ہے ایک ایم پی اے کیلئے مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن ہے کہ اتنے رقبہ پر محیط علاقہ کے مسائل کو Adress کر سکے اور حل کر سکے لہٰذا چترال کو دو انتظامی ضلعوں میں تقسیم کرنے کے بعد یہ چترال کا حق بنتا ہے کہ اس کیلئے دو صوبائی نشستیں مختص کی جائیں اور اس سلسلہ میں دستور پاکستان کے آرٹیکل نمبر 106 شِق 1 میں مزید ترمیم کر کے صوبہ خیبر پختونخوا کی اسمبلی میں نشستوں کی تعداد 116 کی بجائے117 کر دی جائے۔

Facebook Comments