شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / مسلمانوں کی زوال کی اصل وجہ دین سے دوری ہے۔ جب تک ملک میں اسلامی نظام نافذ نہیں ہوتا عوام کو برابری کے حقوق نہیں مل سکتے۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا حتم بخاری شریف میں بیان۔

مسلمانوں کی زوال کی اصل وجہ دین سے دوری ہے۔ جب تک ملک میں اسلامی نظام نافذ نہیں ہوتا عوام کو برابری کے حقوق نہیں مل سکتے۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا حتم بخاری شریف میں بیان۔

چترال(گل حماد فاروقی)مسلمانوں کی زوال کی اصل وجہ دین سے دوری ہے ۔ جب تک مسلمان دین کے ساتھ جڑ نہ جائے دینی تعلیمات پر عمل نہ کرے ان کو سکون نصیب نہیں ہوگا نہ وہ کامیاب ہوں گے۔ ان حیالات کا اظہار امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے جامعہ اقامت دین سینگور میں حتم بخاری شریف کے موقع پر کی۔ انہوں نے کہا کہ تین کروڑ مربع میل پر اسلامی دنیا محیط ہے دنیا کے 75 فی صد پٹرول مسلمانوں کے پاس ہے مگر اسلامی حکومت نہ ہونے کی وجہ سے ان کا مثال قبرستان جیسے ہیں ہم جب تک معاشی طور پر مضبوط نہیں ہوں گے ہم امریکہ اور یورپ کا غلامی کریں گے۔ ہمیں چاہئے کہ اپنے پاؤں پر کھڑے ہوکر بھیک کا کچکول توڑ دے اور خود انحصاری پر عمل پیرا ہو۔ تعلیمی اداروں میں 27 قسم کی تعلیمی نصاب پڑھایاجاتا ہے ۔ ایسے تعلیمی ادارے بھی ہیں جن کو یورپ فنڈ دیتے ہیں غیر سرکاری اداروں کے ذریعے ان کو فنڈ دیتے ہیں اور ان کو نصاب بھی اپنے مرضی کا دیتے ہیں یہی وجہ ہے کہ ہمارا تعلیمی نصاب بھی ہمارا اپنا نہیں ہے۔
شیح الحدیث والقرآن ڈاکٹر عطا ء الرحمان ناظم اعلےٰ رابطہ المدارس الاسلامیہ پاکستان نے جامعہ اقامت دین میں طالبات سے بخاری شریف کی آحری حدیث سنی کہ سبحان اللہ وبحمدہ و سبحان اللہ العظیم جو زبان پر ہلکا رہے مگر میزان کے ترازو میں وزنی ہے۔ انہوں نے اس دینی مدرسے کی طالبات کو نہایت سراہا جنہوں نے بخاری شریف کی اس آحری حدیث کو صرف و نحو کا حیال رکھتی ہوئی پورے اسباق و ثیاق اور راویوں کے دلائیل کے ساتھ پڑھ کر سنائی۔
؂خطیب شاہی مسجد مولانا خلیق الزمان نے بھی اظہار حیال کرتے ہوئے حاظرین پر زور دیا کہ وہ دین اسلام کی پیروی کرے جو دین و دنیا میں کامیابی کا واحد راستہ ہے۔ مولانا شیر عزیز سابق امیر جماعت اسلامی، مولانا جمشید امیر جماعت اسلامی چترال اور دیگر نے بھی اظہار حیال کیا۔ تاہم امیر سراج الحق نے لوگوں سے وعدہ لیا کہ وہ اپنی صلاحیت کو نفاذ اسلامی کیلئے استعمال کرنا ہے اور جماعت اسلامی واحد جماعت ہے جو دین کی سربلندی کیلئے کام کرتی ہے۔
جامعہ اقامت الدین کے مدیر مولانا حفیظ الدین نے مدرسے کی تاریح پر روشنی ڈالی کہ اس سے قبل یہ مدرسہ بالائی چترال کے علاقہ تورکہو میں تھا بعد میں اسے سینگور منتقل کیا گیا اور ان کے والد حاجی مولوی خان اس مدرسے کی نگرانی کرتے ہیں 2014 کو جب یہ مدرسہ یہاں منتقل ہوا تو اس کے بعد اس میں دینی علوم کی تدریس طالبات کیلئے شروع کئے گئے۔ پہلے سال اس جامعہ کے طالبات نے سالانہ امتحان میں صوبے بھر میں اول پوزیشن حاصل کی۔ اس سال اس مدرسے کی 39 طالبات نے رابطۃ المدارس الاسلامیہ کے تحت امتحانات میں شریک ہوئی۔فی الحال دو مرد اور چار خواتین پڑھاتی ہیں اس جامعہ میں دینی علوم کے ساتھ ساتھ بچیوں کی تربیت بھی کی جاتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ یہ حتم بخاری شریف کا پہلا دور ہے جس میں د س طالبات نے حدیث کی مشہور کتاب بخاری شریف حتم کی اور یہ سلسلہ جاری رہے گا۔
اس بابرکت تقریب میں رکن قومی اسمبلی مولانا عبد الاکبر چترالی، ضلع ناظم مغفرت شاہ اور جماعت اسلامی کے اکابرین کے علاوہ کثیر تعداد میں لوگوں نے بارش کے باوجود شرکت کی۔ بعد میں مولانا شیر عزیز کے دعائیہ کلمات سے یہ تقریب احتتام پذیر ہوئی۔

Facebook Comments