شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / تحصیل نائب ناظم مستوج فخرالدین کا ڈومسائل کی بنیاد پر کلاس فوراوردیگر ملازمین کےضلع اپرچترال ٹرانسفر پر شدید ردعمل کا اظہار

تحصیل نائب ناظم مستوج فخرالدین کا ڈومسائل کی بنیاد پر کلاس فوراوردیگر ملازمین کےضلع اپرچترال ٹرانسفر پر شدید ردعمل کا اظہار

چترال ( محکم الدین ) تحصیل نائب ناظم مستوج فخرالدین نے صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ لوئر چترال کی طرف سے ڈومسائل کی بنیاد پر کلاس فور اور  دیگر ملازمین کےضلع اپر چترال ٹرانسفر پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے .اور مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر یہ عمل روک دیا جائے.چترال پریس کلب میں  جمعرات کے روز چترال پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا.کہ اپر چترال ضلع کے حوالے سے ہمارے جو تحفظات تھےاب وہ حقیقت کا روپ دھارتے نظر آ رہے ہیں جس کی ابتدا لوئر چترال کے مختلف اداروں میں ڈیوٹی دینے والے کلاس فورودیگر ملازمین کی عجلت میں اپر چترال تبادلہ کی صورت میں سامنےآچکا ہے ۔انہوں نے کہااپر چترال ایک نو زائیدہ ضلع ہےاس کے پاس ملازمین کیلئے دفاتر نہیں اور نہ فرنیچرودیگر سہولیات ہیں تمام تر اثاثہ جات لوئر چترال کے پاس ہیں ایسے حالات میں ملازمین کو موقع فراہم کئے بغیران کا اپرچترال تبادلہ سراسر ظلم و زیادتی کے مترادف ہےانہوں نے گزشتہ روز لوئر چترال کے ناظمین کی طرف سے منعقد کئے گئے اجلاس اور ملازمین کے تبادلے کے حوالے سےان کے مطالبے کوافسوسناک قراردیااورکہا کہ اس قسم کے فیصلوں سے چترال کے لوگوں میں تعصب اور نااتفاقی کے جراثیم پروان چڑھیں گےجس سے ہمارا قدیم تاریخی اخوت و بھائی چارہ تار تار ہو جائے گا . فخر الدین نے کہا کہ اپر چترال کے لوگ اس بات پر خوش تھے کہ نئے ضلعے کے قیام سے روزگار اور ملازمتوں کے مواقع ملیں گے اور علاقے میں خوشحالی آئے گی اب حالات اس کے بالکل بر عکس ہیں نئی ملازمتوں کی بجائے پرانے ملازمین کے تبادلے کرکے الٹا ان کیلئے مشکلات پیدا کی جارہی ہیں. انہوں نے کہاکہ وہ ٹیکنکل اسٹاف کی تبدیلی کے بالکل مخالف نہیں کیونکہ ان کے بغیرادارے نہیں چل سکتے لیکن جو لوگ پہلے ہی مشکلات سے دوچار ہیں ان کو ڈومسائل کی بنیاد پراپر چترال ٹرانسفر کرنا کسی طور درست نہیں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر یہ کاروائی روک دی جائے اور بے چارے ملازمین کو پریشان نہ کیا جائےانہوں نے اس حوالے سےشندور فیسٹول کے بعد بھرپور احتجاج کرنے کااعلان کیااور کہا کہ اس سلسلے میں اپر چترال کے ناظمین ملازمین اورعوام متفق ہیں .

Facebook Comments
error: Content is protected !!