شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال چترال میں کلاس فور ملازمین کی بھرتیاں صرف اور صرف لوئر چترال سے بذریعہ قرعہ اندازی کی جائےوگرنہ عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا جائے گا۔ امین الرحمن جنرل سیکرٹری تحصیل پی۔ٹی۔آئی ضلع لوئر ، چترال

ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال چترال میں کلاس فور ملازمین کی بھرتیاں صرف اور صرف لوئر چترال سے بذریعہ قرعہ اندازی کی جائےوگرنہ عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا جائے گا۔ امین الرحمن جنرل سیکرٹری تحصیل پی۔ٹی۔آئی ضلع لوئر ، چترال

چترال (نمائندہ چترال آفیئرز ) پی۔ٹی۔آئی تحصیل لوئر چترال کے جنرل سیکرٹری امین الرحمن نے ایک اخباری بیان دیتے ہوئے کہا کہ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال چترال میں کلاس فور ملازمین کی بھرتیاں عدالتی حکم نامے کے تحت قرعہ اندازی کے ذریعے کیا جائے عدالتی حکم نامہ کے خلاف ورزی کی صورت میں قانونی راستہ اختیار کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہکلاس فور کی بھرتیاں صرف اور صرف لوئر چترال سے کی جائے چونکہ صوبائی حکومت کی جانب سے اپر چترال کو الگ ضلعے کا درجہ دے دیا گیا ہے اور الگ ضلعے کے لیے فنڈز بھی مختص کیے جاچکے ہیں لہذا بھرتیاں صرف لوئر چترال ہی کی سطح پر کیے جائیں۔ نئے ضلعے کے قیام کے بعد اپر چترال سے کسی بندے کو لوئر چترال میں کسی پوسٹ کے لیے بطور امیدوار نہ لیا جائے جو کہ قانونی طور بالکل صحیح نہیں جن امیدواروں نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چترال میں کلاس فور کی اسامیوں کے لیے درخواستیں دی ہیں ان کی درخواستیں منسوخ کی جائیں ان پوسٹوں پر صرف اور صرف لوئر چترال کے ڈومیسائل بیس امیدواروں کا حق بنتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ  ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال میں کلاس فور کی خالی آسامیوں کے لئے 19 جولائی کو انٹرویو رکھا گیا تھا مگر ایم۔پی۔اے مولانا ہدایت الرحمن صاحب کی دخل اندازی کی وجہ سے انہیں منسوخ کیا گیا جس کی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں۔اگر حالیہ کلاس فور بھرتیاں سمیت کسی بھی سرکاری ادارے میں کلاس فور ملازمین کی بھرتیوں میں جانب داری ، رشوت ستانی یا سیاسی مداخلت کی گئی تو نہ صرف اس کے خلاف ہم شدید احتجاج کرینگے بلکہ ان عناصر کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اعلی عدالت نے کلاس فور ملازمین کی بھرتیوں کے لئے قرغہ اندازی کا حکم دیاہے ۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال میں بھرتیوں کے لئے  لوئر چترال کے تمام درخواست گزاروں کو بلا کر سب کے سامنے قرغہ اندازی  کیا جائے اور جس خوش نصیب کا نام بذریعہ قرعہ نکل آئے نوکری اسے دی جائ ۔ اگر ایسا کرنے کے بجائے سیاسی مداخلت کی گئی تو اس کےخطرناک نتائج برآمد ہونگے ۔ بھرتی کے کسی بھی مرحلے میں سیاسی مداخلت کو ہر ممکن اقدامات سے روکا جائے تاکہ حق دار کو اس کا حق مل سکے۔

Facebook Comments