شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / اسماعیلی کمیونٹی کے رضاکاروں نے گرم چشمہ روڈ کی اپنی مدد آپ کے تحت مرمت کی۔ سڑک کھنڈرات کا منظر پیش کر رہا تھا۔

اسماعیلی کمیونٹی کے رضاکاروں نے گرم چشمہ روڈ کی اپنی مدد آپ کے تحت مرمت کی۔ سڑک کھنڈرات کا منظر پیش کر رہا تھا۔

اسماعیلی کمیونٹی کے رضاکاروں نے گرم چشمہ روڈ کی  اپنی مدد آپ کے تحت مرمت کی۔  سڑک کھنڈرات کا منظر پیش کر رہا تھا۔
چترال(گل حماد فاروقی)اسماعیلی کمیونٹی کے دو سو کے قریب رضاکاروں نے  گرم چشمہ روڈ کی اپنی مدد آپ کے تحت مرمت کی۔ یہ سڑک پہلے کھنڈرات کا منظر پیش کررہا تھا۔اسماعیلی فرقے کے  رضاکاروں نے گھروں سے بلچہ، کودال، ہتھ ریڑی  اٹھا کر سڑک پر آئے اور مزدا گاڑی میں باہر سے مٹی، بجری اور ریت لاتے ہوئے جو کھڈے تھے اسے بند کرتے رہے اور رضاکار بلچوں سے انہیں ہموار کرتے۔
ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے شہزادہ رضا ء الملک نے کہا کہ ہم ان رضاکاروں کو حراج تحسین پیش کرتے ہیں جو اپنی مدد آپ کے تحت سڑک کی مرمت کرتے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ چیو پل کے قریب سڑک دریا کی جانب ٹوٹ چکا ہے جہاں پہلے بھی ایک حادثہ پیش آیا تھا اور محکمہ مواصلات یعنی  کمیونیکیشن اینڈ ورکس  نے تین ماہ گزرنے کے باوجود اس کی مرمت کیلئے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔انہوں نے حدشہ ظاہر کیا کہ ایسا نہ ہو کہ سڑک تو بلچ  سینگور میں مقیم اسماعیلی رضاکاروں نے مرمت کی مگر اس کی مرمت کا فنڈ بھی C&W والے نکال کر کسی ٹھیکدار کے نام نہ کردے اور اپنی کمیشن کیلئے  سرکاری خزانے کو ٹیکہ نہ لگادے۔
واضح رہے کہ یہ سابق صوبائی وزیر اور رکن صوبائی اسمبلی سلیم خان کے حلقہ نیابت کا واحد سڑک  ہے جو کھنڈرات کا منظر پیش کرتا ہے۔ محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے روڈ کولی گھر بیٹھے تنخواہیں لے رہے ہیں اور سڑک کی مرمت کیلئے ایک دن بھی ڈیوٹی نہیں کرتے یہی وجہ ہے کہ اس سڑک کے بیچ میں اتنے بڑے کھڈے بن چکے تھے کہ مریض ہسپتال پہنچنے سے پہلے جان بحق ہونے کا حطرہ تھا۔ سڑک کی حرابی کی وجہ سے آئے روز حادثات کا بھی حدشہ تھا تو اسماعیلی رضاکاروں نے  اپنی مدد آپ کے تحت سڑک میں مٹی ڈال کرے اسے ہموار کیا تاکہ اس پر گاڑیاں  آرام سے جاسکے۔
مقامی لوگوں نے ان رضاکاروں کی اس اقدام کو نہایت سراہا اور صوبائی حکومت  کے ساتھ وفاقی حکومت پر بھی تنقید کی کہ کئی سالوں سے یہ سڑک حراب پڑا ہے مگر اس کی مرمت کیلئے حکومت نے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔
شہزادہ رضا ء الملک نے بلچ میں ایک بینر بھی آویزاں کیا ہے جس میں انہوں نے کور کمانڈر پشاور، انسپکٹر جنرل فرنٹئیر کور، کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس اور آرمی چیف سے اپیل کی ہے کہ  وہ  اس  سڑک کو ایف ڈبلیو او یعنی فوجی تعمیراتی کمپنی کے ذریعے جلد از جلد بنوائے تاکہ کسی بڑے حادثے سے بچا جاسکے۔
Facebook Comments
error: Content is protected !!