شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / وادی کیلاش سے تعلق رکھنے والی دوشیزہ ریشماں ٹی وی اینکر بننا چاہتی ہے۔ بڑی مشکل حالات میں بی ایس سی پاس کرکے ٹیلیویژن پر کیلاش قبیلے کا نمائندگی کرنا چاہتی ہوں۔ ریشماں کی میڈیا سے گفتگو

وادی کیلاش سے تعلق رکھنے والی دوشیزہ ریشماں ٹی وی اینکر بننا چاہتی ہے۔ بڑی مشکل حالات میں بی ایس سی پاس کرکے ٹیلیویژن پر کیلاش قبیلے کا نمائندگی کرنا چاہتی ہوں۔ ریشماں کی میڈیا سے گفتگو

چترال(گل حماد فاروقی) جنت نظیر وادی کیلاش سے تعلق رکھنے والی لڑکی نیوز کاسٹر بننے کی حواہش مند ہے۔ اپنے محصوص ثقافت، رنگین اور جازب نظر لباس،  اپنے دود  دستور کیلئے ویسے بھی کیلاش لوگ دنیا بھر میں مشہور ہیں مگر اب کیلاش سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی کا حواہش ہے  کہ وہ ٹیلیویژن میں اینکر بنے۔
ریشماں کا تعلق وادی کیلاش کے انیش گاؤں سے ہے اس نے اپنے علاقے میں  کوئی زنانہ سکول اور کالج نہ ہونے کے باوجود بھی چترال جاکر  گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج میں داحلہ لی اور ہاسٹل میں رہائش احتیار کرتی ہوئی بی ایس سی پاس کی۔  ریشماں کا کہنا ہے کہ جب بھی وہ ٹیلیویژن میں کسی خاتون کو خبریں پڑھتی ہوئی دیکھتی ہے تو اس کی دل میں بھی حواہش پیدا ہوتی ہے کہ وہ بھی ان کی طرح ٹی وی  میں آکر خبریں پڑھے۔
ریشماں نے مزید بتایا کہ کیلاش قبیلے کے لوگ اپنی ثقافتی رقص، گیت اور نرالے دستور اور رسم و رواج کی بدولت تو دنیا بھر میں مشہور ہیں مگر آج تک کسی ٹی وی چینل میں کیلاش لڑکی کو بطور اینکر نہیں لیا گیا ہے ان کا کہنا ہے کہ میں چاہتی ہوں کی ٹی وی  کی سکرین پر اپنی محصوص لباس میں آکر نیوز کاسٹر بنوں اور پہلی کیلاش خاتون اینکر کا اعزاز حاصل کروں۔
اب دیکھنا یہ ہے اب ریشماں کو اینکر بنانے میں کونسا ٹیلیویژن سبقت حاصل کرتا ہے اور وہ کونسا خوش قسمت چینل ہوگا جس پر ریشماں اپنی محصوص کیلاش لباس میں آکر خبریں پڑھے اور یوں وہ کیلاش کمیونٹی کی نمائندگی بھی کرسکے۔
Facebook Comments
error: Content is protected !!