شہ سرخیاں
Home / تازہ ترین / فروری 2021 میں چترال، مالم جبہ میں سکینگ ودیگر سرگرمیاں شروع کی جائینگی۔وزیراعظم کو بریفنگ

فروری 2021 میں چترال، مالم جبہ میں سکینگ ودیگر سرگرمیاں شروع کی جائینگی۔وزیراعظم کو بریفنگ

سوات (چترال آفیئرز) وزیر اعظم عمران خان نے اپنے ایک روزہ دورہ سوات کے دوران سیاحتی مقام گبین جبہ کا بھی دورہ کیا جہاں پر وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے وزیراعظم کا استقبال کیا، گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان بھی اس موقع پر موجود تھے۔ اس موقع پر وزیر اعظم کو متعلقہ حکام کی طرف سے صوبے بھر میں سیاحت کے فروغ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ گبین جبہ میں قائم ماحول دوست کیمپنگ پوڈز اگست 2020 سے سیاحوں کیلئے کھول دیئے گئے جس سے علاقے میں سیاحوں کی آمد سے معاشی سرگرمیوں میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ مزید بتایا گیا کہ صوبے کے مختلف سیاحتی مقامات پر 100 کے قریب پوڈز نصب کئے گئے ہیں جبکہ یو این ڈی پی کے تعاون سے مزید 90 پوڈز منگوائے جارہے ہیں۔ صوبائی حکومت کی طرف سے 500 گھرانوں کو آسان شرائط پر فی گھرانہ 4 لاکھ روپے مالیت کے قرضے دیے جانے کا منصوبہ ہے جس سے وہ اپنے گھروں کے ساتھ ایک کمرہ بمع دیگر سہولیات سیاحوں کو فراہم کر سکیں گے۔ ورلڈ بینک کے تعاون سے مانسہرہ، ایبٹ آباد اور سوات میں ہزاروں کنال اراضی پرماحول دوست جدید سیاحتی مراکز قائم کیے جانے کے منصوبے پر کام ہو رہا ہے۔ فروری 2021 میں چترال، مالم جبہ، سوات اور کاغان میں سکینگ، سنو مراتھن، سنو بورڈنگ جیسی سرگرمیاں شروع کی جائیں گی۔ خیبر پختونخوا میں سیاحتی سرگرمیوں کو فروغ دینے کیلئے کالام، کمراٹ اور کالاش میں سپیشل ٹورزم اتھارٹیز قائم کی جا چکی ہیں۔ وزیر اعظم کو مختلف مقامات تک رسائی کیلئے 372 کلو میٹر طویل رابطہ سڑکوں کی تعمیر اور 14 کلو میٹر کمراٹ کیبل کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی۔ وزیر اعظم نے صوبائی حکومت کو ہدایت کی کہ سیاحتی مقامات کو فروغ دینے کے ساتھ ان علاقوں کے لوگوں کا خاص خیال رکھا جائے تاکہ ان کو زیادہ سے زیادہ فائدہ ہو۔ وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ سیاحتی مقامات کو مزید ترقی دینے اور وہاں موزوں معاشی سرگرمیاں شروع کرنے کیلئے بین الاقوامی معیار کے کنسلٹنٹس کی خدمات حاصل کی جائیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ سیاحتی مقامات پر معاشی سرگرمیوں کا زیادہ فائدہ ان علاقوں کے رہائشیوں کو ملنا ضروری ہے۔ انہوں نے مزید ہدایت کی کہ ان مقامات پر صفائی کا خاص خیال رکھا جائے اور غیر ضروری تعمیرات سے اجتناب کیا جائے تاکہ یہاں کی قدرتی خوبصورتی برقرار رہے۔

Facebook Comments
error: Content is protected !!